سری لنکن صدر نے ملک میں دوسری بار ایمرجنسی نافذ کردی | اردو میڈیا

admin
admin 6 مئی, 2022
Updated 2022/05/06 at 9:09 شام
285010 020927 updates
285010 020927 updates

صدر مخالف احتجاج کے دوران طالب علموں نے پارلیمنٹ میں گھسنےکی کوشش کی تاہم مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے پولیس نے آنسو گیس اورپانی کی توپ کا استعمال کیا۔—فوٹو: اے اہف پیسری لنکن صدر گوتابایا راجا پاکسا نے ملک میں ایک بار پھر ایمرجنسی نافذ کردی ہے۔ برطانوی خبررساں ایجنسی رائٹرز کے مطابق سری لنکا میں صدرکےاستعفے کے لیے احتجاج زور پکڑنے لگا، احتجاج کنٹرول کرنےکےلیے  گوتابایا راجا پاکسا نےملک میں ایمرجنسی نافذکردی۔خبررساں ایجنسی کے مطابق ایمرجنسی کےتحت سکیورٹی فورسز کو غیرمعمولی اختیارات حاصل ہوگئے۔اس کے علاوہ تازہ ترین ایمرجنسی نافز کرنے کی مزید  تفصیلات ابھی تک منظر عام پر نہیں لائی گئیں، لیکن پچھلے ایمرجمنسی نے صدر کو فوج کی تعیناتی، شہریوں کو بغیر کسی الزام کے حراست میں لینے اور احتجاج کو  ختم  کرنے  کے اختیارات دیے تھے۔اس سے قبل صدر مخالف احتجاج کے دوران طالب علموں نے پارلیمنٹ میں گھسنےکی کوشش کی تاہم مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے پولیس نے آنسو گیس اورپانی کی توپ کا استعمال کیا۔رپورٹس کے مطابق سری لنکا میں 5 ہفتوں کےدوران دوسری بار ایمرجنسی کا اعلان کیا گیا ہے۔سری لنکن صدر نے  یکم اپریل کو ملک میں ایمرجنسی نافذ کی تھی لیکن پانچ دن بعد اس فیصلے کو  واپس لے لیا تھا۔واضح رہے کہ سری لنکا اس وقت شدید معاشی بحران سے دوچار ہے جہاں حکومت کے پاس تیل کی درآمد کے لیے غیر ملکی کرنسی کا بحران ہے جب کہ تیل کے بحران کے باعث ملک کو بجلی کی بھی شدید قلت کا بھی سامنا ہے۔

TAGGED:
اس آرٹیکل کو شیئر کریں۔
ایک تبصرہ چھوڑیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

AllEscort