کیبنٹ ڈویژن اور وزارت پارلیمانی امور سے ریکارڈ طلب | اردو میڈیا

admin
admin 22 December, 2022
Updated 2022/12/22 at 6:58 AM
4 Min Read
310871 105133 updates
310871 105133 updates

عدالت کو بتایا جائے کہ ان اشیا کی تفصیلات سامنے آنے سے عوامی مفاد کو کیا نقصان ہوگا؟ لاہور ہائیکورٹ/ فائل فوٹو لاہور ہائیکورٹ نے 1947 سے توشہ خانہ سے وصول تحائف کی تفصیلات کے لیے درخواست پرعبوری حکم جاری کردیا۔عدالت نے سیکرٹری کیبنٹ ڈویژن اور وزارت پارلیمانی امور کو 16 جنوری کے لیے نوٹس جاری کردیے جس میں کہا گیا ہے کہ سیکرٹری اور وزارت پارلیمانی امور عدالت  کے جائزے  کےلیے ریکارڈ پیش کریں۔عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ یہ بھی بتایا جائے کہ تحائف کی تفصیلات سامنے نہ لانے کی وجہ کیا ہے؟ عدالت کو بتایا جائے کہ ان اشیا کی تفصیلات سامنے آنے سے عوامی مفاد کو کیا نقصان ہوگا؟ عدالت نے استفسار کیا کہ  ایسا کرنے سے ملک کے بین الاقوامی تعلقات کیسے خراب ہوں گے ؟ اس ملک کے شہریوں سے ایسی معلومات خفیہ رکھنے کی کیا دلیل ہے جہاں حاکمیت خدا کی ہے۔عدالتی فیصلے میں مزید کہا گیا ہےکہ تحفہ لینے والے کا اثاثہ بننے کے بعد اسے ڈکلیئر کرنا عوامی اور سرکاری عہدیدار کی ذمہ داری ہوتی ہے،کیا ان حالات میں وزیر اعظم اور صدر کی جانب سے وصول تحائف پر استحقاق کا دعویٰ کیا جاسکتا ہے ؟  ان تمام سوالوں کا حل نکالنا ضروری ہے، فریقین اس پر تفصیلی رپورٹ پیش کریں۔عدالت نے کہا کہ جب پرائیویٹ شخص ان اشیاکی قیمت کاتعین کرسکتا ہے تو ان معلومات کے لیے استحقاق کا دعویٰ کیسے ہوسکتا ہے؟

Records sought from Cabinet Division and Ministry of Parliamentary Affairs Urdu Media

The court should be told that the public interest will be harmed by revealing the details of these items. Lahore High Court/File photo Lahore High Court has issued an interim order on a petition for details of gifts received from Tosha Khana since 1947. The court has issued notices to the Secretary Cabinet Division and the Ministry of Parliamentary Affairs for January 16, stating that the Secretary and Ministry of Parliamentary Affairs to present the records for review by the court. The court decision has said that it should also be told what is the reason for not revealing the details of the gifts. The court should be told that the public interest will be harmed by revealing the details of these items. The court inquired how the international relations of the country will be damaged by doing so. What is the rationale for keeping such information secret from the citizens of a country where the sovereignty belongs to God? The court decision further states that it is the responsibility of the public and public official to declare the gift after it becomes an asset of the recipient. Can privilege be claimed on gifts received from the Prime Minister and the President? It is necessary to solve all these questions, the parties should submit a detailed report on it. The court said that when a private person can determine the value of these goods, how can there be a claim of privilege for this information?

Share this Article
Leave a comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *