اعتماد کے ووٹ کا نمبر گیم، وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی کو چیلنج کا سامنا | اردو میڈیا

admin
admin 22 December, 2022
Updated 2022/12/22 at 7:01 AM
6 Min Read
310882 124809 updates
310882 124809 updates

پرویز الٰہی کو اعتماد کے لیے 186 ارکان کے ووٹ درکار ہیں اور پنجاب اسمبلی کے 371 کے ایوان میں تحریک انصاف کے 180 ارکان ہیں: ذرائع/ فائل فوٹولاہور: وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی کو ایوان سے اعتماد کا ووٹ لینے میں چیلنج کا سامنا ہے۔ذرائع کے مطابق پرویز الٰہی کو اعتماد کے لیے 186 ارکان کے ووٹ درکار ہیں اور پنجاب اسمبلی کے 371 کے ایوان میں تحریک انصاف کے 180 ارکان ہیں جب کہ تحریک انصاف کو مسلم لیگ (ق) کے 10 ارکان کی حمایت بھی حاصل ہے، اس طرح پنجاب میں حکومتی اتحاد کو 190 ارکان کی حمایت حاصل ہے۔ذرائع کے مطابق پنجاب میں اپوزیشن اتحاد کو بھی180 ارکان کی حمایت حاصل ہے جس میں مسلم لیگ (ن) کے167، پیپلز پارٹی کے7 ارکان شامل ہیں جب کہ اپوزیشن اتحاد میں آزاد ارکان 5 اور راہ حق پارٹی کا ایک رکن بھی شامل ہے۔اسپیکر پنجاب اسمبلی سبطین خاں نے (ن) لیگ کے 18 ارکان اسمبلی کو معطل کررکھا ہے، ان کے 15 اجلاسوں میں شرکت پر پابندی عائد ہے جب کہ مسلم لیگ (ن) نے اسپیکر کے اس اقدام کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر رکھا ہے۔(ن) لیگ کے معطل ارکان میں میاں عبدالرؤف، سمیع اللہ خان، ملک عبدالوحید، صبا صادق، راحیلہ خادم حسین، ربیعہ نصرت ، رابعہ فاروقی، زیب النسا اعوان، کنول لیاقت ایڈووکیٹ، گلناز  شہزادی ،نفیسہ امین، محمد افضل ، عادل بخش، راحت افزا، سنبل مالک حسین، سعدیہ ندیم اور  ذیشان رفیق شامل ہیں۔اسمبلی ذرائع کا کہنا ہےکہ رولز آف پروسیجرکے تحت وزیراعلیٰ کے اعتماد کے ووٹ میں (ن) لیگ کے 18 ارکان ووٹ کاسٹ کرسکتے ہیں۔دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب کے اعتماد کے ووٹ کے معاملے پر اجلاس طلب کرنے سے متعلق اسپیکرنے قانونی ماہرین سے رائے طلب کرلی ہے۔ذرائع کے مطابق  گورنر کےطلب کردہ اجلاس کو آئین کے تحت اسپیکر پنجاب اسمبلی بلاتا ہے لیکن اسمبلی سیکرٹریٹ کی جانب سے اجلاس کا تاحال نوٹیفکیشن جاری نہیں ہوا۔ذرائع کا کہنا ہےکہ قانونی ماہرین سے مشاورت کے بعد اسپیکر اجلاس بلانے یا نہ بلانے کا فیصلہ کریں گے ۔واضح رہےکہ گورنر پنجاب نے وزیراعلیٰ کے اعتماد کے ووٹ کیلئے بدھ کو اسمبلی کا اجلاس طلب کر رکھا ہے۔

The number game of the vote of confidence, Punjab Chief Minister Pervez Elahi faces a challenge Urdu Media

Pervaiz Elahi needs 186 votes of confidence and Tehreek-e-Insaaf has 180 members in the 371-member house of Punjab Assembly: Sources/File Photo LAHORE: Punjab Chief Minister Chaudhry Pervaiz Elahi is facing a challenge in getting a vote of confidence from the House. According to the sources, Pervaiz Elahi needs 186 votes of confidence and there are 180 members of Tehreek-e-Insaf in the 371-member house of Punjab Assembly, while Tehreek-e-Insaf also has the support of 10 members of Muslim League (Q). The government alliance in Punjab has the support of 190 members. According to sources, the opposition alliance in Punjab also has the support of 180 members, which includes 167 members of the Muslim League (N), 7 members of the People’s Party, while the opposition alliance has 5 independent members and A member of Rah Haq Party is also involved. Speaker Punjab Assembly Sabatin Khan has suspended 18 members of the Assembly of the League (N), they are banned from participating in 15 meetings, while the Muslim League (N) has suspended the speaker. The initiative has been challenged in the Lahore High Court. Among the suspended members of the (N) League are Mian Abdul Rauf, Samiullah Khan, Malik Abdul Waheed, Saba Sadiq, Rahila Khad. M. Hussain, Rabia Nusrat, Rabia Farooqui, Zeibul-Nisa Awan, Kanwal Liaquat Advocate, Gulnaz Shahzadi, Nafisa Amin, Muhammad Afzal, Adil Bakhsh, Rahat Afza, Sambal Malik Hussain, Sadia Nadeem and Zeeshan Rafiq are included. Assembly sources say that the rolls Under the off-procedure, 18 members of the (N) League can cast their votes in the Chief Minister’s vote of confidence. On the other hand, the speaker has sought the opinion of legal experts regarding the convening of a meeting on the matter of the vote of confidence in the Chief Minister of Punjab. According to sources, the Governor According to the constitution, the Speaker calls the meeting called by the Punjab Assembly, but the notification of the meeting has not yet been issued by the Assembly Secretariat. Sources say that after consulting legal experts, the Speaker will decide to call the meeting or not. It should be clear that the Governor Punjab has called a meeting of the Assembly on Wednesday for the vote of confidence on the Chief Minister.

Share this Article
Leave a comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *