(ن) لیگ کے 18 معطل ارکان کو اسمبلی اجلاس میں بیٹھنے اور ووٹ ڈالنے کی اجازت | اردو میڈیا

admin
admin 22 December, 2022
Updated 2022/12/22 at 7:07 AM
4 Min Read
310898 034648 updates
310898 034648 updates

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد بلال اور جسٹس رسال حسن نے پنجاب اسمبلی میں مسلم لیگ (ن) کے 18 ارکان پراجلاس میں شرکت پرپابندی کےخلاف درخواستوں پر سماعت کی/ فائل فوٹولاہور ہائیکورٹ نے مسلم لیگ (ن) کے تمام 18 معطل ارکان کو کل کے اسمبلی اجلاس میں شرکت اور ووٹ ڈالنے کی اجازت دے دی۔لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد بلال اور جسٹس رسال حسن نے پنجاب اسمبلی میں مسلم لیگ (ن) کے 18 ارکان پراجلاس میں شرکت پرپابندی کےخلاف درخواستوں پر سماعت کی۔دورانِ  سماعت جسٹس شاہد بلال نے سوال کیا کہ کیا رانا مشہود پر پابندی کے خلاف درخواست غیر مؤثرہوچکی ہے ؟  اس پر رانا مشہود کے وکیل نے کہا کہ رانا مشہود پر 15 نشستوں پر پابندی پوری ہو چکی لیکن قانونی سوال برقرارہے۔رانا مشہود کے وکیل نے مؤقف اپنایا کہ اسپیکرنے (ن) لیگ کے 18 ارکان پر15 نشستوں کے اجلاس میں شرکت پر پابندی لگائی، اسپیکرکے لیے ضروری ہے کہ پابندی سے پہلے دو وارننگز دے،اسپیکر 15 دن کے لیے معطل کرسکتا ہے، 15 نشستوں کے لیے پابندی نہیں لگائی جا سکتی۔اس پر عدالت نے کہا کہ دن اور 15 نشستوں پر اسپیکر کا کیا مؤقف ہے ؟ اس پر اسپیکر کے وکیل نے کہا کہ اس کا ایک حقیقی اور ایک قانونی پہلو ہے، میرے مؤکل کے مطابق یہ درخواست قابل سماعت نہیں ہے ۔مسلم لیگ ن کے وکیل نے کہا کہ اگر ارکان پر اجلاس میں شرکت پر پابندی نہیں ہے تو ہماری درخواست غیرمؤثرہوگئی۔لاہور ہائیکورٹ نے دلائل مکمل ہونے کے بعد 18 ارکان کے اجلاس پر پابندی کے نکتے پر فیصلہ محفوظ کر لیا جسے کچھ دیر بعد سناتے ہوئے تمام 18 ارکان کو اجلاس میں شرکت کی اجازت دےدی۔عدالت  نے کہا کہ اگر ووٹنگ ہوئی تو یہ ارکان ووٹ بھی ڈال سکتے ہیں۔

(N) Allowing 18 suspended members of the League to sit and vote in the assembly session Urdu Media

Justice Shahid Bilal and Justice Risal Hasan of the Lahore High Court heard the petitions against the ban on the participation of 18 members of the Muslim League (N) in the Punjab Assembly. Justice Shahid Bilal and Justice Risal Hasan of Lahore High Court heard the petitions against the ban on the participation of 18 members of Muslim League (N) in the Punjab Assembly. During the hearing, Justice Shahid Bilal asked a question. Has the petition against the ban on Rana Mashhood become ineffective? On this, Rana Mashhood’s lawyer said that Rana Mashhood’s ban on 15 seats has been completed, but the legal question remains. It is necessary for the speaker to give two warnings before the ban, the speaker can suspend for 15 days, ban cannot be imposed for 15 seats. On this, the court said that what is the position of the speaker on the day and 15 seats? On this, the speaker’s lawyer said that it has a real and a legal aspect, according to my client, this application is not admissible. Muslim League-N’s lawyer said that if the members are not banned from attending the meeting, then our application became ineffective. After the arguments were completed, the Lahore High Court reserved its decision on the point of banning the meeting of 18 members, which after some time, allowed all 18 members to participate in the meeting. The court said that if the voting took place, these members You can also vote.

Share this Article
Leave a comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *